اے پی سی آر مہاراشٹرا کی مختصر رپورٹ

اے پی سی آر مہاراشٹرا کی مختصر رپورٹ
٭ ایوت محل ضلع کے مقام پوسد کی جامع مسجد کے خطیب وامام حافظ مجیب الرحمٰن صاحب کو 2015 میں عید الاضحی کے موقع پر ہوئی چاقو زنی کی واردات کے بعد گرفتار کیا گیا تھا۔ حالانکہ اس واردات سے ان کا کوئی تعلق نہیں تھا ۔ اس کے باوجود انہیں گرفتار کرکے ان پر دیگر غیر ضروری دفعات کے ساتھ ساتھ ظالمانہ دفعہ یو اے پی اے بھی لگادی گئی تھی۔
2015 سے اے پی سی آر (APCR)مہاراشٹر ان کے کیس کی پیروی کررہی ہے۔ ابتدا میں یہ کیس ناگپورکورٹ میں ایڈوکیٹ میرنغمان علی دیکھ رہے تھے۔ گزشتہ ڈھائی سال سے یہ کیس آکولہ کی خصوصی عدالت میں زیر سماعت ہے۔ آکولہ میں اے پی سی آر کی جانب سے ملت کے جواں سال اور بیباک ایڈوکیٹ علی رضا خان نے انتہائی خلوص اور جرات کے ساتھ اس کیس کی کامیاب پیروی کی اور بہت مدلل آرگیومنٹ کے ذریعے اے ٹی ایس کی کاروائیوںکو غلط ثابت کیا۔تمام گواہیاں ، بیانات ا ور آرگیومنٹ وغیرہ 26؍اپریل کو مکمل ہوگئے۔ اب 21مئ کو اس کیس سے متعلق فیصلہ سنایا جائے گا۔ امید ہے کہ حافظ مجیب الرحمٰن صاحب کو تمام الزامات سے بری کر دیا جائے گا۔ ان شاءاللہ۔ اس دوران حافظ مجیب الرحمٰن کو اپنی صحت سے متعلق بڑی آزمائشوں سے گزرنا پڑا۔ جیل میں انہیں Alcertu Colittis مرض لاحق ہواتھا جس کے طویل علاج اور دو آپریشن کے بعد گردوںکا مرض بھی لاحق ہوگیا تھا۔ ڈائلاسس کے مراحل سے گزرنے کے بعد اب الحمد للّٰہ تیزی سے افاقہ ہورہا ہے ۔ 4 ماہ مستقل ناگپور میڈیکل ہاسپٹل میں زیر علاج رہنے کے بعد فی الوقت ناگپور جیل کے میڈکل سیکشن میں ان کا علاج جاری ہے۔ ان کے علاج ومعالجہ کے سلسلے میں بھی اے پی سی آر نے بھر پور توجہ دی۔ علاج کے لیے قانونی چارہ جوئیاں،دواخانے کے لوازمات،ناگپور میں ان کی فیملی کے طعام و قیام کی سہولیات فراہم کی گئی۔
٭ اسی طرح اورنگ آباد روضہ باغ انکاؤنٹر کیس بھی اکولہ میں ہی چل رہاہےجو اپنے آخری مراحل میں ہے۔ اس کیس میں امانت مقیم شرافت خان کی پیروی بھی اے پی سی آر کررہی ہےجنہیں گزشتہ سال ضمانت دلانے میں ایڈووکیٹ علی رضا خان کامیاب ہوئے تھے۔ ان شاء اللہ امانت بھی با عزت بری ہو جائیں گے۔
٭ دیگر ملزمین ظفر حسین اور محمد انور اور پوسد کیس کے دیگر ملزمین عبد الملک اور شعیب خان اور ان کے لواحقین کو بھی اے پی سی آر ممکنہ مالی تعاون کررہی ہے۔یہ سب کیس آکولہ سیشن کورٹ میں چل رہے ہیں۔
  ٭ GIOڈیفیمیشن کیس ممبئی ہائیکورٹ میں ایڈووکیٹ یوسف مچھالہ صاحب دیکھ رہے ہیں۔
٭ ایروڈہ جیل میں شہید کیے گئے ملزم قتیل احمد کا کیس بھی ایڈووکیٹ مہر دیسائی کی پیروی میں ممبئی ہائیکورٹ میں ہے ۔
٭ عبد الحمید خان کے بیٹوں پر دہشت گردی کی شکایت کے خلاف کیس اورنگ آباد ہائیکورٹ میں ایڈووکیٹ تہور خان پٹھان دیکھ رہے ہیں۔
٭ الحمد اللہ مہاراشٹرمیں APCRکی 20 ضلعی شاخیں قائم کی گئیں جن کے تحت ہر ضلع میںمخلص وکلاء اور پیرا لیگل ایکٹیوسٹ ٹیم تیار ہوئی۔ اس سال 20 مقامات پر قانونی بیداری کے عوامی پروگرام منعقد ہوئے۔
٭ قانون کے 5 طالب علموں کو اسکالر شپ دی گئی۔
نوٹ: آپ تمام حضرات سے مخلصانہ اپیل ہے کہ اس ماہ مبارک میں صدقات اور زکوٰۃ سے APCRمہاراشٹر کی اعانت فرمائیں۔

                                    محمداسلم غازی 
                                    صدر APCRمہااراشٹرا

(برائے اشاعت)

اپنا تبصرہ بھیجیں